بنیادی صفحہ » آج کا قطعہ  » "جیسی روحیں”

"جیسی روحیں”

"جیسی روحیں”

پیڑ کی جڑ نوچ ڈالی آپ نے
بے ثمر اب زرد سی ہر ڈال ہے
اس تباہی کا گلہ کس سےکریں
یہ ہماری شامت _ اعمال ہے

طارق تاسی لاہور پاکستان

 

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

تری مان لیتے ہیں گو جانتے تھے

"مودی بتادے” …! تری مان لیتے ہیں گو جانتے تھے توپھیرےگاآنکھیں زباں سےپھرےگا کہیں تھک ...