بنیادی صفحہ » اوورسیز کمیونٹی » آخر کب تک حلقہ چار چڑھوئی کی عوام کے ساتھ زیادتی ہوتی رہے گی:راجہ شفیق احمد
راجہ شفیق احمد
راجہ شفیق احمد

آخر کب تک حلقہ چار چڑھوئی کی عوام کے ساتھ زیادتی ہوتی رہے گی:راجہ شفیق احمد

چیئرمین اوور سیز پاکستان مسلم لیگ ن راجہ شفیق احمد

چیئرمین اوور سیز پاکستان مسلم لیگ ن راجہ شفیق احمد

لیوٹن:صفدر بخاری(دھنک لندن نیوز) چیئرمین اوور سیز پاکستان مسلم لیگ ن راجہ شفیق احمد صاحب نے کہا ہے کہ آخر کب تک حلقہ چار چڑھوئی کی عوام کے ساتھ زیادتی ہوتی رہے گی۔کب تک کارکنان رسوا ہوتے رہیں گے۔کب تک کارکنان اور غریب لوگوں کو بے وقوف بنایا جائے گا۔ملازمین تیس سال گورنمنٹ کو انجائے کرتے ہیں۔گورنمنٹ میں عیاشی کرتے ہیں اور اس کے بعد ریٹائر ہو کر حلقہ کی عوام کے سر پر بیٹھنے کی کوشش کرتے ہیں۔وہ وقت گزر گیا ہے کہ حلقہ کے لوگ اب یہ چیز برداش کریں گے۔جن لوگوں کا احتساب ہونا چاہیے۔جن لوگوں نے سکیموں کی بندر بانٹ کی ہو۔ان لوگوں کا احتساب ہونا چاہیے۔وہ لوگ حلقہ کا الیکشن لڑنا چاہتے ہیں۔ابھی وقت بہت دور ہے۔حلقہ کا الیکشن لڑنا ان لوگوں کا بنیادی حق ہے۔جو کارکنان ہیں۔جن لوگوں نے حلقہ میں دن رات محنت کی ہے۔جن لوگوں نے حلقہ میں رہ کر لوگوں کی خدمت کی ہے۔یہ ان لوگوں کا حق ہے۔میں آہستہ آہستہ اگلے دنوں میں ہر کسی کو ننگاہ کروں گا۔جو بھی کارکنان کے ساتھ زیادتی کر رہا ہےاور جو کوئی بھی لوگوں کی عزت کا خیال نہیں رکھ رہا ہے۔قیادت کو بھی چاہیے وہ ان لوگوں کا خیال رکھیں۔جن لوگوں نے بنیادی طور پر جماعت کا ساتھ دیا ہے۔جو لوگ مشکل وقت میں جماعت کے ساتھ کھڑے ہوئے ہیں۔جن لوگوں نے جماعت کے لیئے قربانیاں دی ہیں۔حلقہ میں جہاں خرابیاں ہوئی ہیں ان کی وجہ سے لوگ ایک دوسرے سے لڑے ہیں۔ان لڑائیوں اور جھگڑوں کی وجہ سے کچھ لوگوں کے رشتہ دار ایک دوسرے سے الگ ہوگئے ہیں۔جن لوگوں نے اپنی جیب سے حلقہ کے لیئے روپے لگائے ہیں۔جن لوگوں نے آپ کو ووٹ دیئے ہیں۔ان لوگوں کو کسی بھی وجہ سے رسوا ہوتے ہوئے نہیں دیکھ سکتے ہیں۔جن لوگوں کے ساتھ زیادتیاں اور ناانصافیاں ہوئی ہی

چیئرمین اوور سیز پاکستان مسلم لیگ ن راجہ شفیق احمد

چیئرمین اوور سیز پاکستان مسلم لیگ ن راجہ شفیق احمد

ں۔ان کا ازالہ ہر حال میں ہو گا۔ میرے جو برطانیہ کے ساتھی ہیں۔میں ان کو بھی دعوت دیتا ہوں۔جو بھی یہاں پر آتا ہے اس کے استقبال کے لیئے دس بندے اکٹھے کر کے ان کو لیڈر بنا کر یہاں سےبھیجتے ہیں۔خدا کا خوف کرو آپ لوگ بھی اور آپ لوگوں کا جو الیکشن میں کردار تھا وہ ہم سب جانتے ہیں۔چند لوگ ہمارے ساتھ گئے تھے پورے الیکشن کی کمپین کے لیئے۔باقی یہاں پر تماشہ دیکھ رہے تھے اور آپ لوگوں کو بھی یہ نہیں چاہیے کہ یہاں پر مستقل ہی رہیں۔کم از کم الیکشن میں اپنا ووٹ کاسٹ کرنے کے لیئے تو جانا چاہیے۔میں پوچھتا ہوں کہ ان لوگوں کا کیا کردار ہے۔ ہمارے حلقے کے جو ملازمین ہیں۔جنہوں نے تیس تیس سال نوکریاں کی ہیں۔انہوں نے کیا کیا ہے ہمارے حلقے کے لیئے۔آخر کیا کیا ہے۔ملازمین یہ بات کان کھول کر سن لیں کہ آپ حلقہ کی عوام کو پاگل نہیں بنا سکتے ہیں۔حلقہ کی عوام کو اور ہمیں یہ چیز کبھی قبول نہیں ہے اور نا یہ مانتے ہیں کہ کوئی بھی ملازم اٹھ کر یہ اعلان کرے کہ میں الیکشن لڑوں گا۔وہ لوگ کہاں گئے ہیں جو بیس سال سے حلقہ کی عوام کے لیئے کام کر رہے ہیں۔ان لوگوں کا کیا ہوگا جن لوگوں نے اپنی ساری زندگی کی کمائی حلقہ پر لگا دی ہے۔میں سمجھتا ہوں کہ یہ اس آدمی کا حق بنتا ہے۔جو عوام کے دکھ درد ،غمی اور خوشی میں ساتھ رہا ہو۔جو پیچھلے تین،چار سال سے حلقہ میں ہے اور حلقہ کے لوگوں کی خدمت کر رہے ہیں۔ان لوگوں کا حق بنتا ہے۔کوئی ایسے کیسے پیراشوٹ کے زریعے آجائے گا۔اور یہ کہے گا کہ میں الیکشن لڑوں گا۔اور اس کے علاوہ یہ کہے کہ مجھ سے بہتر کوئی بھی آدمی نہیں ہے۔عوام باشعور ہو گئی ہے۔حلقہ کے لوگ سب جانتے ہیں کہ کون کتنے پانی میں ہے۔اس لیئے مزید لوگوں کے سامنے ڈرامہ نا بنایا جائے۔یہ وقت ہے حلقہ کی عوام کی خدمت کرنے کا۔یہ وقت ہے لوگوں کے کام کروانے کا۔یہ وقت ہے کارکنوں کا خیال رکھنے کا۔یہ وقت ہے لوگوں کو نوکریاں دلانے کا۔یہ نہیں ہےکہ جو ملازمین عیاشی کرتے رہے ہیں وہ پھر آکر لوگوں کے سامنے ڈرامے بازی کریں۔یہ ڈرامے بازی بند ہونی چاہیے۔آپ یہ تاثر نا دیں حلقہ کے لوگوں کو کہ وزیراعظم کی طرف سے آپ کو رٹائرمنٹ دی گئی ہے اور آپ کو کہا گیا ہے کہ آپ حلقہ میں جا کر کام کریں۔حلقہ کے لوگوں کو بے وقوف نا بنائیں ہم سب اصلیت جانتے ہیں۔

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

چوہدری بشارت حسین مرحوم کے والد گرامی مرحوم کے بلند درجات و مغفرت کے لیے دعا کی گئی۔

چوہدری بشارت حسین مرحوم کے والد گرامی مرحوم کے بلند درجات و مغفرت کے لیے دعا ...