بنیادی صفحہ » اوورسیز کمیونٹی » ٹوسٹماسٹرز انٹرنشنل کے طریقہ تعلیم کی بابت خواتین کو پیغام

ٹوسٹماسٹرز انٹرنشنل کے طریقہ تعلیم کی بابت خواتین کو پیغام

کاروان ادب کا خواتین میں مکتوم ہنر و کارنامے سامنے لانا قابل ستائش ہے ، قدسیہ لالی

خاندانی اور معاشرتی نظام آج بھی خواتین کو مخلوط محافل میں بھیجنا پسند نہیں کرتا ، کاروان ادب کی نشست سے خطاب

رپورٹ :سارہ خان
تصویر : مشاعل نوید
منطقہ شرقیہ ایسا زرخیز خطہ ہے جہاں ادب و فن کی آبیاری جاری و ساری رہتی ہے گویا ہر فرد اپنے حصے کا دیا جلا رہا ہے ، ایسی ہی ایک شمع روشن ہے جو بالخصوص خواتین کے لیے “ کاروانِ ادب کے نام سے محترمہ جویریہ اسد جو ایلیٹ کلب کیطتوحِ رواں ہيں روشن کیے ہوئے ہيںی
تقریب ميں شہر کی خواتین نے بھر پور حصہ لیا اور مختلف زاویوں سے اپنے فن کا مظاہرہ کیا , ایک سبق آموز ڈرامہ پیش کیا گیا اور عالیہ فراز ، نمیرہ محسن لہنا فراز اور قدسیہ ندیم لالی نے جدید شاعری کے فن پارے پیش کیے جسے حاضرین محفل نے خوب سراہا ،
ایلیٹ کلب کے تحت ،حلقے ميں اردو اور انگریزی ادب کے فروغ کے لیے کاروانِ ادب اپنی وقتاً فوقتاً نشستيں منعقد کرتا رہتا ہے گزشتہ ہفتے اسی سلسلے کی ایک ایسی ہی پروقار نشست منعقد ہوئی
منطقہ شرقیہ کی معروف ادیبہ و شاعرہ محترمہ قدسیہ ندیم لالی اس مخصوص ادبی نشست کی مہمانِ خصوصی تھيں
اپنے خطاب ميں انہوں نے کاروانِ ادب کی حکمت عملی کو سراہتے ہوئے تنظیم کی روح رواں محترمہ جویریہ اسد اور ان کے معاونین کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ کم وسائل و کم وقت کے باوجود جس طرح آج کی تقریب کے لیے مخصوص سجاوٹ ، مختصر سبق آموز ڈرامہ ، نو آموز شاعرات کو اُن کا کلام خواتین کی نشست ميں سنانے کے لیے ایک موقع فراہم کرنا جس سے اُن کے کسی بھی ٹیلنٹ کی توصیف ہو سکے اور گھریلو خواتین کو ایک پلیٹ فارم فراہم کرنا اُس سے یقیننا خواتین اپنی گھریلو ذمہ داریوں کے ساتھ اپنے ذوق و شوق کی تسکین با آسانی کر سکتی ہيں ، انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا خاندانی و معاشرتی نظام اب بھی خواتین کو مخلوط محافل ميں بھیجنا پسند نہيں کرتے ، ایسے ميں کاروانِ ادب منطقہ شرقیہ کی خواتین کے لیے کھل کر اپنے فن کے اظہار کا بہترین اسٹیج ہے
قدسیہ ندیم لالی نے حاضرین محفل کی بھی حوصلہ افزائی کی اور کہا کہ ان سب خواتین کی کسی خاص تربیت اور رہنمائی کے بغیر خواتین ميں اتنا جوش اور امنگ موجود ہے تو اس سے واضح ہوتا ہے کہ زرا سی رہنمائی سے خواتین کا ایک بڑا حلقہ بن سکتا ہے کہ چراغ سے چراغ جلتے ہيں اگرچہ کہ ان کی حوصلہ افزائی ہوتی رہے
ایسے ميں جویریہ اسد کاروانِ ادب کے تحت صرف ادبی حلقے تک خود کو محدود نہيں کیے ہوئيں وہ بنیادی طور پر خواتین کے اُن چھپے ہوئے کارناموں جو ہنر و جو ہماری مشرقی ، تہذیب و ٽقافت کے تحت کیے جا رہے ہيں ان کو سامنے لانے کا عمل بھی کر رہی ہيں جو ابھی تک اُن کے گھر کی چاردیواری سے باہر نہيں پہنچا
تقریب کے لیے ٽنا بتول کا بنایا ہوا خوبصورت و دیدہ زیب کیک جو کتاب کی شکل ميں بنایا گیا تھا کی توصیف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس کمال ہنر مندی و تجارتی بنیاد پر بنا ہوا محسوس ہو رہا ہے جو لائق صد تحسین اور سب کی توجہ کا مرکز رہا اسی طرح حاضرین محفل کے لیے کروشیا کے بنے ہوئے “ بُک مارک “ جو تقریب ميں تحفتاً پیش کیے گے کے لیے بھی تعریفی کلمات کے حق دار رہے ، قدسیہ ندیم لالی جو منطقہ شرقیہ کے پہلےپاکستانی کمیونٹی ٹوسٹماسٹرز کلب کی صدر منتخب ہوئی ہيں ، انہوں نے ٹوسٹماسٹرز انٹرنشنل کے طریقہ تعلیم کی بابت خواتین کو پیغام دیتے ہوئے کلب ميں شمولیت کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ اردو ہماری قومی زبان ہے اس سے محبت کا اظہار اس کے فروغ و ترویج کا طریقہ ہے جو آج کہيں ٽقافتی یلغار کا شکار سمجھا جا رہا ہے جب کہ اردو اس وقت دنیا کی چوتھی بڑی زبان ہے ۔
آخر ميں قدسیہ ندیم لالی نے جویریہ اسد کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے خواتین کی رہنمائی کے واسطے اپنے مکملُ تعاون کا یقین دلایا ، جویریہ اسد نے مہمان خواتین اور مہمانِ خصوصی قدسیہ ندیم لالی کی آمد کا شکریہ ادا کیا اور ہروگرام کے اختتام کا اعلان کیا ۔

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

چوہدری بشارت حسین مرحوم کے والد گرامی مرحوم کے بلند درجات و مغفرت کے لیے دعا کی گئی۔

چوہدری بشارت حسین مرحوم کے والد گرامی مرحوم کے بلند درجات و مغفرت کے لیے دعا ...