بنیادی صفحہ » صدائےکشمیر » بہتا تو کشمیر میں خون

بہتا تو کشمیر میں خون

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل

(ایک نغمہ نہتے کشمیریوں کے لیے)

دیکھ ذرا اقوامِ عالم
بہتا تو کشمیر میں خون
دیکھ تو جلتے، بُجھتے منظر
پاؤں کی زنجیر میں خون
جنّت جیسی اِس وادی کو
ظُلم نے یوں برباد کیا
چاند ہوا ہے جگنو جیسا
جگنو ٹھہرا ایک دیا
لوگ جلائیں کب تک دل کا
اِس بُجھتی تنویر میں خون
دیکھ ذرا اقوامِ عالم
بہتا تو کشمیر میں خون

پھولوں جیسے کِھلتے چہرے
پیکر، رنگ اور خوشبو کے
خاک میں مل کر خاک ہوئے ہیں
منظر رنگ اور خوشبو کے
چھلک رہا ہے قریہ قریہ
موسم کی تصویر میں خون
دیکھ ذرا اقوامِ عالم
بہتا تو کشمیر میں خون

کہساروں میں ڈھیر لگے ہیں لاشوں کے
جھرنوں سے بہتا ہے خون انسانوں کا
بچے، بُوڑھے، مرد و زن سب
رزق ہوئے حیوانوں کا
جسم پروئے تلواروں میں
دیکھ جفا کے تیر میں خون
طوق ستم کے کب ٹُوٹیں گے
سُنو گے کب فریاد
کب آزادی اِن کو ملے گی
کب ہوں گے آزاد
کب تک یوں ہی لکھا رہے گا
اِن سب کی تقدیر میں خون
دیکھ ذرا اقوامِ عالم
بہتا تو کشمیر میں خون

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

فرینکفرٹ میں پاکستانیوں کی امن ریلی اور کشمیریوں کے ساتھ فقید المثال اظہار یکجہتی  (

فرینکفرٹ میں پاکستانیوں کی امن ریلی اور کشمیریوں کے ساتھ فقید المثال اظہار یکجہتی (منور ...