بنیادی صفحہ » صدائےکشمیر » جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برمنگھم یونٹ کا ایک مباحثہ ( کانفرنس ) کا انعقاد

جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برمنگھم یونٹ کا ایک مباحثہ ( کانفرنس ) کا انعقاد

برمنگھم برطانیہ ( تیمور لون ) جموں کشمیر کی موجودہ صورتحال پر برطانیہ کے شہر برمنگھم میں جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برمنگھم یونٹ نے ایک مباحثہ ( کانفرنس ) کا انعقاد کیاگیا جسمیں تمام سیاسی جماعتوں کے راہنماؤں نے شرکت کی ۔ نیوزیلینڈ کی کرائسٹ چرچ مسجد میں دہشتگردانہ حملہ میں بے گناہ افراد کے قتل عام پر شدید غم وغصہ کا ظہار کیا گیا اور شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی ۔ برطانیہ میں آباد کشمیریوں کو اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق حق خودارادیت دئے جانے پر اتفاق کیا گیا ۔ مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم کو روکنے کے لئے عالمی طاقتوں سے اپنا کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ تمام سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں اور دیگر شرکاء نےاس بات پر اتفاق کیا کہ برطانیہ میں مختلف ایم پیز کے ساتھ مل کر مسئلہ کشمیر اجاگر کیا جائے اور حکومت برطانیہ کو اس دیرینہ مسئلہ کے حل کے لئے مثبت کردار ادا کرنے پر راضی کیا جائے ۔

16 مارچ 1846 میں کشمیریوں کو گلاب سنگھ کے ہاتھوں فروخت کرنے پر حکومت برطانیہ سے بھرپور مطالبہ کیا گیا کہ وہ اپنے اس عمل کی کشمیری قوم سے معافی مانگیں اور 1947 میں کشمیریوں سے کئے گئے وعدے حق خودارادیت کے لئے برطانیہ کے نیوٹرل کردار ادا کرنے پر زور دیا گیا۔

راولپنڈی میں جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کے 30 راہنماؤں و کارکنان کو گرفتار کر کے نامعلوم مقامات پر رکھنے کی بھرپور مذمت کی گئی اور ان کی رہائی کا مطالبہ کیا گیا ۔اس مباحثہ میں جے کے نیپ برطانیہ برانچ کے صدر امجد اشرف ، شفیق چوہدری ، حسن بھائی ، صائب مظفر ، ظہور چوہدری ، اللہ دتہ چوہدری ، ڈاکٹر آفتاب ، لالا ذوالفقار ، شبیر ایڈووکیٹ ، ذوہیب خان ، سلیم یاس ، حاجی نثار خان ، پیر اعجاز جے کے ایل ایف کے چوہدری اشرف ، لیاقت لون ، ناظم بھٹی ، نامور کشمیری دانشور شمس رحمان ، مسلم لیگ کے یعقوب ، پی ٹی آئی کے ظفر جرال ، زاہد سرفراز ، معاذ رائے شماری کے فاروق انصاری ، آفتاب انصاری ، جے کے پی این پی کے فراز خان ، جے کے ایل سی کے نجیب افسر ، انعام الحق ، لندن سے مشہور قوم پرست راہنما تنویر اعظم ، مشتاق مغل ، عثمان مشتاق اور دیگر ساتھیوں نے شرکت کی ۔ اس مباحثہ میں تمام شرکاء نے اس بات پر زور دیا کہ مل جل کر جموں کشمیر کے اندر ریفرنڈم کے لئے کام کیا جائے اور کم سے کم اختلافی ایشوز پر اکٹھے ہو کر آواز بلند کی جائے ۔
پروگرام میں اس بات پر زور دیا گیا کہ کنٹرول لائن پر فائرنگ بند کی جائے اورمسئلہ کشمیر کشمیریوں کی امنگوں کے تحت حل کیا جائے ۔
آخر میں برطانیہ میں آباد مظفرآباد ئن کی 21 اپریل کےلندن پروٹیسٹ بسلسلہ دریا بچاؤ مظفرآباد بچاؤ میں شمولیت کا بھی اعتماد دیا گیا۔

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

۔ انڈیا نے کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے ریکارڈ توڑڈالے

رپورٹ مطیع اللہ کشمیر کونسل یورپ کے چئیرمین سید علی رضا نے کہا ھے کہ ...