بنیادی صفحہ » طب و صحت » زیتون کے دیگر فوائد اور خارش کا علاج :

زیتون کے دیگر فوائد اور خارش کا علاج :

زیتون کے دیگر فوائد اور خارش کا علاج :
زیتون کے فوائد سے کسے انکار ہو سکتا ہے جسکا ذکر اللہ تعالیٰ نے اپنے پاک کلام میں ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ایک جگہ نہیں کئی جگہ پر بیان فرما کے بنی نوع انسان کے لیے محفوظ کر دیا جس میں سورت الانعام، النحل ، المومنون ، التین شامل ہیں . اس درخت کو اللہ تعالیٰ مبارک درخت کا نام دیا ہے. جس سے اس درخت کے صحت افزا فوائد کی طرف اشارہ ملتا ہے . سورت التین میں الله تعالیٰ نے انجیر اور زیتون کا ذکر اسطرح فرمایا ہے :
وَالتِّينِ وَالزَّيْتُونِ -(التین -١) ترجمہ : قسم ہے انجیر کی اور زیتون کی .
رسول پاک صلی اللہ و الہ وسلم نے اپنی سنت سے بھی اور آپکی احا دیث مبارکہ سے بھی زیتون کے صحت افزا فوائد کا با خوبی پتہ چلتا ہے . حضرت اسید الا نصاری رضی اللہ سے روایت ہے کہ رسول پاک صلی اللہ و الہ وسلم نے فرمایا زیتون کے تیل کو پیو اور اس سے جسم کی مالش کرو کہ یہ ایک مبارک درخت ہے (ترمزی ، ابن ماجہ ، دارمی)
حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ رسول پاک صلی اللہ و الہ وسلم نے فرمایا زیتون کا تیل پیو اور اسے لگاؤ کیونکہ یہ پاک اور مبارک ہے (ابن ماجہ ، حاکم )
حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ ہی سے روایت ہے کہ رسول پاک صلی اللہ و الہ وسلم نے فرمایا زیتون کا تیل پیو اور اسے لگاؤ کیونکہ اس میں ستر بیماریوں سے شفا ہے جن میں ایک کوڑھ بھی ہے (ابن ماجہ)
زیتون کا درخت تین سے چار میٹر اونچا ہوتا ہے اسکے پتے چمکدار ہوتے ہیں اور اس پر بیر کی شکل کا اک چمکدار پھل لگتا ہے جسکا رنگ سبزی مائل یا جامنی ہوتا ہے اور ذائقہ کسیلا ہوتا ہے.
پرانی الہامی کتابوں میں بھی اس درخت کا ذکر ملتا ہے . طوفان نوح کے بعد زمین پر سب سے پہلے زیتون کا درخت ہی نمایاں ہوا تھا . زیتون کے درخت کو سیاست میں امن و سلامتی کی علامت سمجھا جاتا ہے .
زیتون کے درخت کا پھل زیتونہ کہلاتا ہے اس پھل سے جو تیل حاصل ہوتا ہے اسے روغن زیتون کہا جاتا ہے . زیتون کے پھل اور روغن زیتون کے بے شمار فوائد ہیں. روغن زیتون سب سے زیادہ پیٹ کے امراض کے لیے مفید ہے یہ بدن کو گرم کرتا ہے پتھری کو توڑ کر نکلتا ہے . اور قبض کشا ہونے کی وجہ سے معدے کے افعال کو درست رکھتا ہے بھوک بڑھاتا ہے آنتوں میں پڑے ہوے سدے بھی کھولتا ہے پتے کی پتھری بھی روغن زیتون کے استعمال سے ٹوٹ کر خارج ہو جاتی ہے .
زیتون کے تیل کے مستقل استعمال سے معدے کی تیزابیت ختم ہوجاتی ہے . دودھ میں ملاکر پینے سے السر کا خاتمہ ہو جاتا ہے . روغن زیتون کو تھوڑے سے گرم پانی میں ملا کر پینے سے چار پانچ دن میں دائمی قبض سے نجات مل جاتی ہے . پیٹ کے فاسد مادے اور اگر پیٹ میں کوئی زہریلی شے چلی جائے تو زیتون کا تیل تریاق کا کام کرتا ہے .
پیٹ اور آنتوں کے کینسر سے بچنے اور علاج کے لیے زیتون کا تیل بہت اچھی دوا ہے .ٹی بی جیسے موزی مرض میں زیتون کے تیل کو مستقل طور پر دودھ میں ملا کر پینے سے دو تین ماہ میں مکمل شفا ملجاتی ہے .
زیتون کے تیل کو شہد میں برابر مقدار میں ملا کر گرم پانی میں ڈال کر پینے سے دمہ کے مرض میں افاقہ ہوتا ہے اور مستقل استعما ل سے دمہ کے مرض کے حملے خاطر خواہ حد تک ختم ہوجاتے ہیں .
زیتون کے تیل کو کسی اچھی کریم میں ملا کر جلد کی بیماریوں کے لیے ایک اکسیری دوا کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے . جن میں آگ سے جلنا ، زخموں ، پھوڑے پھنسیوں ، خشک خارش ، چہرے اور جسم پر موجود داغ دھبوں، حمل اور پیدائش کے بعد زچہ کے پیٹ پر خارش کے نشانات کو ختم کرنے میں زیتون کا تیل بہت مفید اور زود اثر علاج ہے . زیتون کے تیل کی مسلسل مالش سے چیچک اور اسی طرح کے دوسرے داغ دھبے صاف ہوجاتے ہیں .
بالوں کو گرنے اور سفید ہونے سے بچانے کے لیے روزانہ ان میں زیتون کا تیل لگانا ایک موثر علاج ہے . ہاتھوں اور چہرے کی جلد کو نرم و گداز رکھنے کے لیے روزانہ ان پر زیتون کا تیل لگانا چاہئے . زیتون کے تیل کی مالش کرنے سے جوڑوں اور عرق النسا (لنگڑی ) کا درد ٹھیک ہو جاتا ہے .
زیتون کے تیل کا مستقل استعمال جسم کے مدافعتی نظام کو مضبوط بنا کر جسم کو نزلہ زکام نمونیا جیسی موسمی اور موزی بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے .
یونیورسٹی کالج لندن کی ریسرچ کے مطابق ڈاکٹر کیٹ والٹر کہتی ہیں وہ عمر رسیدہ افراد جو اپنی روزانہ کی خوراک میں زیتون کے تیل یا پھل کا استعمال کرتے رہے ہوں اور اسے جاری رکھتے ہیں انکو بڑھاپے کی بیماریاں کم لگتی ہیں اور اگر لگتی بھی ہیں تو انکا دورانیہ بہت کم ہوتا ہے .
یونیورسٹی آف پویا اٹلی کے سائنسدانوں کی ریسرچ کے مطابق زیتون کے تیل کو ایو کلپٹس کے تیل میں ملاکر لگانے سے جلد پر لگنے والی زخم جلدی بھر جاتے ہیں .
زیتون کے تیل کا استعمال جسم کی چربی کو کم کرتا ہے . ڈاکٹر کارولین ڈین کا کہنا ہے کہ پیٹ اور کمر پر اکٹھی ہونے والی چربی سو بیماریوں کی جڑھ ہے جن میں دل کے امراض ، ذیابطیس اور کولیسٹرول کا اکٹھا ہونا سر فہرست میں . اسی حقیقت کو سامنے رکھتے ہوے کمر کی گولائی اور قد کی نسبت کو ڈاکٹر حضرات دل کے امراض کے لیے بطور ایک پیمانہ مانتے ہیں .
کیت یونیورسٹی آف انڈیا کے ڈاکٹر گپتا اور انکی ٹیم کی ریسرچ کے مطابق دوسری صحت افزا غذاؤں کے ساتھ زیتون کے تیل کے مستقل استعمال سے آرتھرایٹس جیسی تکلیف دہ بیماری کا شافی علاج کیا جا سکتا ہے .
پراسٹیٹ کینسر میں زیتون کے تیل کا استعمال سے علاج میں خاطر خواہ مدد ملتی ہے یہ بات میرا یم ہسپتال آف برون یونیورسٹی میں تحقیق سے پتہ لگائی گئی ہے .
مندرجہ بلا حقائق سے یہ بات عیاں ہوتی ہے کہ زیتون کا پھل اور اسکا تیل مختلف بیماریوں سے شفا کے لیے بذات خود ایک کافی و شافی علاج کے خواص اپنے میں رکھتا ہے

تعارف: Admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

یادداشت کو بہتر بنانے میں مدد دینے والے آسان طریقے

یادداشت کو بہتر بنانے میں مدد دینے والے آسان طریقے کیا آپ اپنی یادداشت کو ...