بنیادی صفحہ » آج کا قطعہ 

آج کا قطعہ 

“پھر کوئی شب خون”…؟

“پھر کوئی شب خون”…؟ سَر کوئی کُہسار کرنے کو ، اُٹھا کر ایڑیاں دیکھتاہوں خوش گماں سےچند بونے ، چل پڑے محو _ حیرت ہے سمندر ، رات کے پچھلے پہر نا خدا ہاتھوں سے ہر کشتی ڈبونے ، چل پڑے طارق تاسی سربراہ عالمی ادبی کنبہ” لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

پردہ کشائی 

پردہ کشائی “اپریل فول”۔۔۔۔۔۔ زندوں کو دفنانے والو ! ایک قیامت ڈھانے والو ! جلتےدیپ بجھانے والو ! گھر گھر آگ لگانے والو ! سچ کوجھوٹ بنانےوالو! سچی بات چھپانےوالو ! تم بھی ذد میں آسکتےہو اپریل فول منانے والو ! طارق تاسی

مزید پڑھیں »

آغا کی صدارت / قاف کی دھمکی

خوب شرارت کرتے ہیں ، دل روتا ہے چور صدارت کرتے ہیں ، دل روتا ہے اک دھمکی پر یارو ہٹ کر میرٹ سے پیش وزارت کرتے ہیں ، دل روتا ہے طارق تاسی

مزید پڑھیں »

تری مان لیتے ہیں گو جانتے تھے

“مودی بتادے” …! تری مان لیتے ہیں گو جانتے تھے توپھیرےگاآنکھیں زباں سےپھرےگا کہیں تھک نہ جائیں اٹھاتے اٹھاتے بتا تو سہی اور کتنا گرے گا طارق تاسی

مزید پڑھیں »

“اللہ کی پکڑ”

“اللہ کی پکڑ” وطن کو جنہوں نے سدا لوٹ کھایا نہیں ہیں کسی رو رعایت کے لائق فلک پر بہت صاف لکھا ہوا ہے بدلنے لگے ہیں زمینی حقائق طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“یاد_ماضی”

“یاد_ماضی” پاؤں کے نیچے ہمارے تخت تھا اور اپنے سر پہ تھا اک تاج بھی لاشہ _ عہد _ درخشاں دوستو! سرد خانے میں دھرا ہے آج بھی طارق تاسی لاہور پاکستان  

مزید پڑھیں »

“مودی کی مجبوری”

“مودی کی مجبوری” ہوش وخرد کی،امن کی،باتیں فضول ہیں مودی ہے یارو مبتلا جنگی جنون میں پہنچے گا انتہاوں پر ، طے ہو گا دیکھنا یہ انتخابی مرحلہ جنگی جنون میں طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“خبردار ہوشیار”

“خبردار ہوشیار” فقط یہ منہ زبانی دھمکیاں لگتی نہیں تاسی کسی جانب سے اک حملہ اچانک ہو بھی سکتا ہے کوئی سنجیدگی سے خبطی بابا کو یہ سمجھائے نتیجہ اس شرارت کا بھیانک ہو بھی سکتا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان  

مزید پڑھیں »

“کشمیر کا نوجہ”

“کشمیر کا نوجہ” پھول کھلتےتھے یہاں چاروں طرف تھا سما خوش رنگ کل کی بات ہے تیرتے ہیں جس پہ لاشے رات دن آہ تاسی ‘جھیل ڈل’ کی بات ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“شاہ خرچی اب نہیں”

“شاہ خرچی اب نہیں” مدد دینے آیا ہمیں “شاہ زادہ” حقیقت ہے یارو فسانہ نہیں ہے خدا نے ہمیں ایک موقع دیا ہے خدارا اسے اب گنوانا نہیں ہے ملی ہےجو امداد اتنا سمجھ لیں یہ قومی ہے،ذاتی خزانہ نہیں ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“کب تک ؟”

“کب تک ؟” روز نیا ہے ایک ڈرامہ کل “پانامہ” اب “پلوامہ” قوم کی قسمت میں ہے یارو فاقے ، مہنگائی ، ہنگامہ کیا لکھتے ہم لوگ حقائق ناقص کاغذ خام ہے خامہ طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“غصہ کمہار پر”

“غصہ کمہار پر” کوئی بھی آغاز یا انجام ہو کھینچ لائے درمیاں مودی ہمیں تھا دھماکہ ظلم کا رد _ عمل دے رہا ہے دھمکیاں مودی ہمیں طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“باعث_تشویش”

“باعث_تشویش” ہم رہےخاموش گرچہ کی گئی سر زمیں برباد پاکستان کی دوستو یہ سوچنے کی بات ہے آج کیوں بدلی زباں ایران کی طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“برق گرتی ہے تو”

“برق گرتی ہے تو” سنا ہےکہانی میں کل شام یارو نیا ایک کردار ڈالا گیا ہے مفادات کی باہمی کشمکش میں ہمیں جان سے مار ڈالا گیا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“خاموش احتجاج”

“خاموش احتجاج” عجب پیڑ یارو اگایا گیا ہے کڑی دھوپ آئی ہے سایا گیا ہے سبھی تہمتوں کومٹانےکی خاطر اسے از سر _ نو بنایا گیا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“نسخہ_کیمیا”

“نسخہ_کیمیا” صاف چوروں کی اگر تختی ہوئی قوم کی سمجھو کہ بدبختی ہوئی یہ اگل ڈالیں گے سب کھایا ہوا جیل میں جس دن ذرا سختی ہوئی طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »