بنیادی صفحہ » آج کا قطعہ 

آج کا قطعہ 

“مودی کی مجبوری”

“مودی کی مجبوری” ہوش وخرد کی،امن کی،باتیں فضول ہیں مودی ہے یارو مبتلا جنگی جنون میں پہنچے گا انتہاوں پر ، طے ہو گا دیکھنا یہ انتخابی مرحلہ جنگی جنون میں طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“خبردار ہوشیار”

“خبردار ہوشیار” فقط یہ منہ زبانی دھمکیاں لگتی نہیں تاسی کسی جانب سے اک حملہ اچانک ہو بھی سکتا ہے کوئی سنجیدگی سے خبطی بابا کو یہ سمجھائے نتیجہ اس شرارت کا بھیانک ہو بھی سکتا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان  

مزید پڑھیں »

“کشمیر کا نوجہ”

“کشمیر کا نوجہ” پھول کھلتےتھے یہاں چاروں طرف تھا سما خوش رنگ کل کی بات ہے تیرتے ہیں جس پہ لاشے رات دن آہ تاسی ‘جھیل ڈل’ کی بات ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“شاہ خرچی اب نہیں”

“شاہ خرچی اب نہیں” مدد دینے آیا ہمیں “شاہ زادہ” حقیقت ہے یارو فسانہ نہیں ہے خدا نے ہمیں ایک موقع دیا ہے خدارا اسے اب گنوانا نہیں ہے ملی ہےجو امداد اتنا سمجھ لیں یہ قومی ہے،ذاتی خزانہ نہیں ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“کب تک ؟”

“کب تک ؟” روز نیا ہے ایک ڈرامہ کل “پانامہ” اب “پلوامہ” قوم کی قسمت میں ہے یارو فاقے ، مہنگائی ، ہنگامہ کیا لکھتے ہم لوگ حقائق ناقص کاغذ خام ہے خامہ طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“غصہ کمہار پر”

“غصہ کمہار پر” کوئی بھی آغاز یا انجام ہو کھینچ لائے درمیاں مودی ہمیں تھا دھماکہ ظلم کا رد _ عمل دے رہا ہے دھمکیاں مودی ہمیں طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“باعث_تشویش”

“باعث_تشویش” ہم رہےخاموش گرچہ کی گئی سر زمیں برباد پاکستان کی دوستو یہ سوچنے کی بات ہے آج کیوں بدلی زباں ایران کی طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“برق گرتی ہے تو”

“برق گرتی ہے تو” سنا ہےکہانی میں کل شام یارو نیا ایک کردار ڈالا گیا ہے مفادات کی باہمی کشمکش میں ہمیں جان سے مار ڈالا گیا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“خاموش احتجاج”

“خاموش احتجاج” عجب پیڑ یارو اگایا گیا ہے کڑی دھوپ آئی ہے سایا گیا ہے سبھی تہمتوں کومٹانےکی خاطر اسے از سر _ نو بنایا گیا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“نسخہ_کیمیا”

“نسخہ_کیمیا” صاف چوروں کی اگر تختی ہوئی قوم کی سمجھو کہ بدبختی ہوئی یہ اگل ڈالیں گے سب کھایا ہوا جیل میں جس دن ذرا سختی ہوئی طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“مداوا کیسے ہو”

“مداوا کیسے ہو” کس نے کی امداد بتانا مشکل ہے کون کرے برباد بتانا مشکل ہے سچ ہے میری گنتی تھوڑی کچی ہے زخموں کی تعداد بتانا مشکل ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“اہل_زر کا دفاع”

“اہل_زر کا دفاع” مانتے ہیں سانس لیتے ہیں ابھی جانتے ہیں مفلسوں میں جان ہے ان پہ لیکن دیں توجہ کس طرح اس میں انکی صحت کا نقصان ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“جیسی روحیں”

“جیسی روحیں” پیڑ کی جڑ نوچ ڈالی آپ نے بے ثمر اب زرد سی ہر ڈال ہے اس تباہی کا گلہ کس سےکریں یہ ہماری شامت _ اعمال ہے طارق تاسی لاہور پاکستان  

مزید پڑھیں »

“دفتر _ شکایت”

“دفتر _ شکایت” ہاں کسی بھی پل برہنہ کر دیئے جائیں گے یہ مفلسوں کی سب قبائیں رہن رکھ دیں آپ نے آپ کے جرموں کی ہے تفصیل کتنی دل شکن پاک دھرتی کی فضائیں رہن رکھ دیں آپ نے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“قول و فعل میں تضاد”

“قول و فعل میں تضاد” مرے دیس میں سب الٹ ہو رہا ہے غنیمت ہےدل پھر بھی روتا نہیں ہے یہ دیکھا گیا ہے ، سیاسی عناصر جو کہتے ہیں ہوگا ، وہ ہوتا نہیں ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »

“ٹوٹتے خواب”

“ٹوٹتے خواب” ہر جانب ہی جن بھوتوں کے ڈیرے ہیں شہر یہ کوہ _ قاف دکھائی دیتا ہے ہو جائیں گے پاک جو حد سے گندے ہیں تاسی مجھ کو صاف دکھائی دیتا ہے طارق تاسی لاہور پاکستان

مزید پڑھیں »