بنیادی صفحہ » شعر و سخن

شعر و سخن

ابھی تو میں نے تری کوئی آرزو نہیں کی ..ابھی تو میں ترے نام و نشاں بناتا ہوں

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل الگ جہاں سے زمین و زماں بناتا ہوں میں لامکاں میں اُتر کر مکاں بناتا ہوں ابھی تو میں نے تری کوئی آرزو نہیں کی ابھی تو میں ترے نام و نشاں بناتا ہوں یہاں تو روشنی کچھ کام آنے والی نہیں دُھواں دُھواں ہے فضا تو دُھواں بناتا ہوں میں اُس کے دستِ عطا ...

مزید پڑھیں »

وہ بھی دن تھے کہ بہت خوش تھا اسیری میں یہ دل یہ بھی دن ہیں کہ ترے غم سے رِہائی مانگے

غزل دل مرا جس کے لیے نغمہ سرائی مانگے مجھ سے وہ شخص محبت میں خدائی مانگے दिल मेरा जिसके के लिए नगमा सराई मांगे। मुझसे वह शख्स मोहब्बत में खुदाई मांगे।। ایک پَل اُس سے بچھڑنا میں گوارا نہ کروں عمر بھر کے لیے جو مجھ سے جُدائی مانگے एक पल उससे बिछड़ना मैं गवारा न करूं। उम्र भर ...

مزید پڑھیں »

قسم ہے آپ کی یاں نقدِ جاں تک بات آپہنچی

سیّد کامران زبیر کامیؔ جنونِ عشق میں سوزِ نِہاں تک بات آپہنچی قسم ہے آپ کی یاں نقدِ جاں تک بات آپہنچی وہ اکثر دیکھتے ہیں بادلِ ناخواستہ مجھ کو نصیبِ دشمناں یارو! یہاں تک بات آپہنچی نہیں الفت رہی اُن کو مرے ٹوٹے ہوئے دل سے بیاں کیا کیجئے زخمِ زیاں تک بات آپہنچی سجا رکھی ہے اک تصویر ...

مزید پڑھیں »

اے یار بس آکے سماجا مرے دل میں

غزل حسرت مرے دل میں ہے تمنّا مرے دل میں اے یار بس آکے سماجا مرے دل میں کچھ عشق بُتوں کا ہے تو کچھ خوف خدا کا دُنیا مری آنکھوں میں عُقبیٰ مرے دل میں آجائیے منہ کُھل گیا ناسورِ جگر کا ہے آپ کے آنے کا یہ رستہ مرے دل میں کرتاہُوں سدا،سیر عرب اور عجم کی گُلشن ...

مزید پڑھیں »

دل پہ سجتا ہے عشق…

دل پہ سجتا ہے عشق… … اور عشق پہ جنوں کا سفر جچتا ہے…. جنوں پہ سجتی ہیں لگامیں… اور لگاموں پہ ہنر جچتا ہے… ہنر مندی پہ سجتے ہیں ہاتھ سجانے والے… اور سجانے والے پہ خرد مند کا بحر جچتا ہے… عشق بے مول کہاں بکتا ہے… جہاں قیمت ہو وہاں جچتا ہے… اسکی قیمت ہے وجود کا ...

مزید پڑھیں »

یہ معجزہ بھی تیرے حسن لالہ فام کا تھا

یہ معجزہ بھی تیرے حسن لالہ فام کا تھا “کہ سارے شہر میں چرچا ترے ھی نام کا تھا” نظر جھکا کے ہمیشہ ملا حسینوں سے کہ یہ تقاضا حسینوں کے احترام کا تھا غم جہان سے بیگانہ کر دیا دل کو بڑا عجیب نشہ اس نظر کے جام کا تھا ذرا سی بات پکڑ کر کہانیاں گھڑنا عجب مزاج ...

مزید پڑھیں »

جو گھر کی چیز ہے گھر میں رہے تو اچھا ہے

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل ہمیشہ اپنی نظر میں رہے تو اچھا ہے جو گھر کی چیز ہے گھر میں رہے تو اچھا ہے غمِ جہاں بھی ترے غم کے ساتھ ساتھ چلے نظر کا شوق سفر میں رہے تو اچھا ہے دیا ہے مشورہ اِس بار مجھ کو دریا نے ترا سفینہ بھنور میں رہے تو اچھا ہے بِچھے ...

مزید پڑھیں »

آنسو میں عکسِ ہجر دکھایا گیا مجھے

سیّد کامران زبیر کامیؔ قصّہ شکستِ دل کا سنایا گیا مجھے آنسو میں عکسِ ہجر دکھایا گیا مجھے پھر گِر پڑے گا فرش پہ خیمہ وجود کا گر چارہ ساز ہوش میں لایا گیا مجھے اُف اِلتِماسِ وصل کی مشکل مسافتیں تکمیلِ آرزو میں رلایا گیا مجھے مرہونِ اِلتِفاتِ فراوانئ ستم آشُفتہ حال دشت میں لایا گیا مجھے! سوزِ غمِ ...

مزید پڑھیں »

بس ا ک فقير کی سوئ ہوئ صدا چپ ہے

کلام مبشر۔ غزل ديا خموش نہ دلان کی ہوا چپ ھے بس ا ک فقير کی سوئ ہوئ صدا چپ ہے سمجھ ميں آتی ھيں اب بے زباں کی باتيں خلوص بول رھا ھے تبھی ادا چپ ھی نئ نئ ھيں ادائيں چمن ميں غنچوں کی لٹا کے آئ ھے سب کچھ تو اب صبا چپ ھے درست خود کوسمجھتا ...

مزید پڑھیں »

یہ جو پاکستان ہے پیارے

✍🏻ڈاکٹر نبیل احمد نبیل✍🏻 نغمہ یہ جو پاکستان ہے پیارے ہم سب کی پہچان ہے پیارے یہ جو پاکستان ہے پیارے علّامہ کے خوابوں جیسا دیس نہیں کوئی بھی ایسا قائد کا فرمان ہے پیارے یہ جو پاکستان ہے پیارے ہم سب کی پہچان ہے پیارے ماؤں جیسی فطرت اِس کی ساری دھرتی جنّت اِس کی ہم گُل یہ گُلدان ...

مزید پڑھیں »

جذبہ و احساس ہے زیر و زبر سُنتا ہوں میں

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل جذبہ و احساس ہے زیر و زبر سُنتا ہوں میں آج کل ایسی زمانے کی خبر سُنتا ہوں میں اِک ہجومِ بیکراں رہتا ہے دن بھر یاد کا ایک نوحہ دردِ دل کا رات بھر سُنتا ہوں میں آندھیوں کے ساتھ مل کے اب اُلٹ دینے لگی پنچھیوں کے گھونسلے شاخِ شجر سُنتا ہوں میں ...

مزید پڑھیں »

میڈی جان! مَیکوں کُجھ تھی گیا ہے

میڈی جان! مَیکوں کُجھ تھی گیا ہے کُجھ اکھیاں کافر تھی گیاں ہِن کُجھ دل وی دین تے نئیں رہ گیا میڈے وس وِچ ھا ھک پیر میڈا اوھو پیر زمین تے نئیں رہ گیا میڈے تَن مَن وچ میڈی جی سئیں وچ میڈی اَن مَن وِچ کوئی اپنڑاں جیونڑ جی گیا ھے میڈی جان ! میکوں کُجھ تھی گیا ...

مزید پڑھیں »

کچھ ایسے خود میں بشر، اب سمٹتا جاتا ہے

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل کچھ ایسے خود میں بشر، اب سمٹتا جاتا ہے فلک سے ذرّے کی مانند گھٹتا جاتا ہے میں جب سے سوچ نئی سوچنے لگا، مجھ سے کوئی خیالِ گزشتہ لپٹتا جاتا ہے مجھے بھی آئنہ ہونے کی مل رہی ہے سزا مرا وُجود بھی ٹکڑوں میں بٹتا جاتا ہے یہ کس کے ہاتھ میں آیا ...

مزید پڑھیں »

اکثر اوقات خون رنگ آنسو چشمِ افسردہ کی نمی سے ملے

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل ہاں کسی سے کبھی کسی سے ملے دردِ تازہ ہی زندگی سے ملے ایسے ملتی ہے اُس سے اپنی نظر جس طرح چاند، چاندنی سے ملے اُس نے بخشا جو وصل کا لمحہ مسکراتی ہوئی گھڑی سے ملے شاخِ اُمّید پر ہیں گُل جتنے تیرے ہونٹوں کی تازگی سے ملے اکثر اوقات خون رنگ آنسو ...

مزید پڑھیں »

جب وہ آتا نہیں نظر مجھ کو کتنی مشکل میں جان ہوتی ہے

ڈاکٹر نبیل احمد نبیل غزل جب محبت جوان ہوتی ہے زندگی مہربان ہوتی ہے جب وہ آتا نہیں نظر مجھ کو کتنی مشکل میں جان ہوتی ہے وہ نہیں ہے میاں تو دُنیا بھی اب کہاں درمیان ہوتی ہے راہِ اُلفت میں آدمی کی اُڑان صورتِ آسمان ہوتی ہے اِس ترے انتظار کی ہم سے کب بیاں داستان ہوتی ہے ...

مزید پڑھیں »

شوزیب کاشر کی چند غزلیں

ہجراں پہ گزر کر کے دکھاؤ تو میں مانوں!! وحشت کو بسر کر کے دکھاؤ تو میں مانوں!! دیوار کو در کہنا تو آسان ہے صاحب دیوار کو در کر کے دکھاؤ تو میں مانوں!! ہر آنکھ ہے مسحور یہ منظر کا اثر ہے منظر پہ اثر کر کے دکھاؤ تو میں مانوں!! اپنے تئیں سقراط بنے پھرتے ہو تم ...

مزید پڑھیں »